کتاب: سہہ ماہی مجلہ البیان کراچی - صفحہ 144

’’ما رأیت أعلم علی وجہ الارض من ھن الشیخ ‘‘ روئے زمین پر اس وقت(محدث گوندلوی) جیسا صاحب علم وفضل عالم میں نے نہیں دیکھا۔  حضرت محدث گوندلوی کی تدریسی مدت نصف صدی سے زیادہ ہے آپ نے جن دینی مدارس میں تدریسی خدمات انجام دیں ان کی تفصیل حسب ذیل ہے۔ دار الحدیث ۔گوندلانوالہ ضلع گوجرانوالہ مدرسہ تعلیم الاسلام ۔روڈانوالا جامعہ محمدیہ ۔گوجرانوالہ جامعہ اسلامیہ گلشن آباد گوجرانوالہ جامعہ دار السلام عمر آباد(مدراس) جامعہ اسلامیہ مدینہ یونیورسٹی مدینہ منورہ(سعودی عرب) جامعہ سلفیہ ۔فیصل آباد تلامذہ جس مدرس کی تدریسی مدت نصف صدی سے زیادہ ہو اس کے تلامذہ کا شمار ممکن نہیں ۔ ذیل میں آپ کے چند اُن تلامذہ کا ذکر کیا جاتاہے جنہوں نے درس وتدریس اور تصنف وتالیف میں نمایاں خدمات انجام دیں۔ اصحاب تدریس مولانا ابو الحسن عبید اللہ رحمانی مبارکپوری ، مولانا نذیر احمد رحمانی ، ملونی بن حکیم عبدالشکور عراقی، مولانا محمد عطاء اللہ حنیف بھوجیانی، مولانا حافظ محمد اسحاق حسینوی، مولانا ابو البرکات احمد مدراسی ، علامہ احسان الٰہی ظہیر، مولانا حافظ عبد اللہ بڈھیالوی، شیخ الحدیث مولانا محمد عبد اللہ آف گوجرانوالہ، مولانا پیر محمد یعقوب قریشی، مولانا محمد عبدہ فیروزپوری، شیخ الحدیث مولانا محمد اعظم، مولانا محمدصدیق فیصل

  • فونٹ سائز:

    ب ب