کتاب: سہہ ماہی مجلہ البیان کراچی - صفحہ 157

علامہ احسان الٰہی ظہیر شہید رحمہ اللہ : شیخ الاسلام مولانا ابو الوفا ثناء اللہ امر تسری رحمہ اللہ، اللہ تعالیٰ کی نشانیوں میں ایک نشانی تھے۔(آیۃ من آیات اللہ)  حکیم عنایت اللہ نسیم سوہدروی رحمہ اللہ مولانا ثناء اللہ ایک عبقری شخصیت تھے میدان مناظرہ میں تو خصوصاً اُنہوں نے اپنی حاضر جوابی،شگفتہ بیانی، بذلہ سبخی اور معاملہ فہمی سے اپنی انفرادیت کو ہر طبقہ سے ہمیشہ تسلیم کرایا۔  مولانا محمد خالد سیف فیصل آبادی : مولانا ثناء اللہ امرتسری رحمہ اللہ کو علم وفضل کی رفعتوں کے ساتھ ساتھ رب ذوالجلال والاکرام نے آپ کو بہت اونچے عادات وخصائل سے سرفراز فرمایا تھا آپ نہایت نرم خو، حلیم الطبع، خوش گفتار، سلیقۂ شعار، بلند کردار، اخلاق کریمانہ اور بیگاہوں میں انتہائی عزت وتکریم کی نظر سے دیکھے جاتے تھے۔تقریر ہو یا تحریر دونوں میں آپ کا اسلوب ایسا شگفتہ تھا کہ اس میں کوئی آپ کا سہیم وشریک نہ تھا حاضر جوابی اور برجستہ گوئی میں کوئی آپ کا عدیل نہ تھا۔ مولانا محمد اسحاق بھٹی مولانا ثناء اللہ امرتسری مقرر بھی تھے اور بلند مایہ مناظر بھی،دینی علوم کے ماہر بھی تھے اور غیر اسلامی ادیان سے باخبر،مصنف بھی تھے اور محقق بھی ،مفسر بھی تھے اور ماہر حدیث بھی، اصولی بھی تھے اور عالم فقہ بھی،کلامی بھی اور فلسفی ومنطقی بھی اپنے انداز خاص میں وہ سیاست میں بھی حصہ لیتے تھے اور ملکی مسائل میں بھی گہری دلچسپی رکھتے تھے۔

  • فونٹ سائز:

    ب ب