کتاب: سہہ ماہی مجلہ البیان کراچی - صفحہ 163

(4) حدیث نبوی اور تقلید شخصی : اس کتاب میں قرآن مجید کے ساتھ احادیث رسول کے شرعی حجت ہونے کا ثبوت اور قرآن وحدیث کی باہمی نسبت کی نوعیت بیان کرتے ہوئے حدیث نبوی اور تقلید شخصی کی تحقیق کی گئی ہے اور منکرین حدیث کے جوابات اچھی طرح دیئے گئے ہیں۔  مولانا ثناء اللہ امر تسری کی وفات : 14اگست 1947ء میں پاکستان معرض وجود میں آیا اور امرتسر کا ضلع بھارت کے حصہ میں آیا مولانا امر تسر سے ہجرت کر کے لاہور آئے اور لاہور میں کچھ روز قیام کے بعد شیخ الحدیث مولانا محمد اسمعیل سلفی کے پاس گوجرانوالہ تشریف لے آئے اور جنوری 1948ء کو سرگودھا تشریف لے گئے جہاں انہیں ثنائی برتی پریس امرتسر کے تبادلہ میں پریس آلاٹ ہوا تھا فروری 1948ء میں ان پر فالج کا حملہ ہوا اورآخر اس مرد درویش نے 15 مارچ 1948ء کو وفات پائی۔ انا للہ وإنا إلیہ راجعون تاثرات : مشہور صحافی اور ادیب اور مجلس خلافت کے رہنما قاضی عدیل احمد عباسی لکھتے ہیں کہ قلوب پر فالج گرا دینے والے لرزہ خیز حالات میں ایک مرد کامل نکلا جو ہمہ صفت موصوف تھا عالم متبحر،مفسر،محدث،واعظ،مناظر،محقق،مفکر،مردآہن اور مستقل مزاجی کا پیامبر تھا مجدد عصر،مبلغ اعظم، محقق اکبرحضرت شیخ الاسلام مولانا ابو الوفا ثناء اللہ امرتسری رحمۃ اللہ علیہ مولانا عبد الرؤف رحمانی جھنڈانگری (م 1999ء) ماہنامہ ندائے مدینہ کان پور کے شیخ الاسلام نمبر میں لکھتے ہیں کہ : اگر پوری دنیائے اسلام کے اکابر علماء کسی ایک مجلس علمی میں جمع ہوں اور بیک وقت عیسائیوں، آریوں،سناتن دھریوں، ملحدوں،نیچریوں،قادیانیوں،شیعوں،منکرین حدیث، چکڑالویوں،

  • فونٹ سائز:

    ب ب