کتاب: سہہ ماہی مجلہ البیان کراچی - صفحہ 184

اشراق میں کئے گئے تو ’’ اسلام اور موسیقی اشراق کے اعتراضات کا جائزہ ‘‘ لکھی۔ حبیب الرحمان کاندھلوی نے اپنی کتاب مذہبی داستانیں اور ان کی حقیقت کے نام سے لکھی جس میں صحیح بخاری کی احادیث کو نشانہ بنایا گیا، اس کا جواب شیخ صاحب نے ’’احادیث صحیح بخاری و مسلم میں پرویزی تشکیک کا علمی محاسبہ‘‘ کے نام سے کتاب لکھی۔مزید دفاع صحیحین کے بارے میں کتب بھی لکھی۔ سرفراز صفدر صاحب کی 27 کتب کا مطالعہ کرکے تبصراتی طور پر مدلل تنقید کی اور کتاب کانام رکھا’’ مولانا سرفراز صفدر صاحب اپنی تصانیف کے آئینے میں‘‘ اس کے جواب میں ان کے بیٹے عبدالقدوس قارن صاحب نے ’’مشہور غیر مقلد ارشاد الحق اثری کا مجذوبانہ واویلا ‘‘کے نام سے کتاب لکھی ،جس کا جواب شیخ صاحب نے اس نام سے دیا ’’کہ آئینہ ان کو دکھایا تو برا مان گئے ۔‘‘ اس کے علاوہ احادیث الھدایۃ فنی وتحقیقی حیثیت ،اسباب اختلاف الفقہاء سمیت توضیح الکلام، تنقیح الکلام اور تائید تنقیح الکلام فاتحۃ خلف الامام کے مسئلے پرانسائیکلو پیڈیا کی حیثیت رکھتی ہیں۔ اور کچھ عرصہ قبل ہی ایک کتاب ’’ اعلاء السنن فی المیزان ‘‘ لکھی۔ شیخ صاحب نے مذکورہ کتاب میں ان اصول و قواعد کی خبر لی ہے جو تصحیح و تضعیف احادیث میں صاحب اعلاء السنن اختیار کرتے ہیں۔ یقیناً اس کے علاوہ بھی دیگر کتب ہیں ،البتہ یہاں انہی کا ذکر مناسب سمجھا ہے جن پر مطلع ہوسکے ہیں۔اللہ تعالیٰ استاذ محترم کو طویل عمر عطا فرمائے۔ ہر قسم کے شر اور آفت سے انہیں محفوظ رکھے، اور مزید ان سے یہ علمی کام لیتا رہے اور اپنی بارگاہ میں شرف قبولیت عطا فرمائے۔ آمین سبحانک اللھم و بحمدک اشھد ان لا الہ الا انت استغفرک و اتوب الیک

  • فونٹ سائز:

    ب ب