کتاب: سہہ ماہی مجلہ البیان کراچی - صفحہ 82

اسی طرح موسیٰ علیہ السلام کی ہمارے پیارے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ صورت حال تھی کہ جب آپ اسراء ومعراج کے موقع پر موسیٰ علیہ السلام کے پاس سے گذرے تو وہ رونے لگے۔ تو یہ رشک ہےجسے نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنے ایک فرمان میں حسد کا نام دیاہےچنانچہ آپ نے فرمایا ’’ کسی شخص پر حسد ( رشک ) کرنا سوائے دو شخصوں کے جائز نہیں، ایک وہ شخص جسے اللہ نے کتاب دی اور وہ اٹھ کر اسے رات کو پڑھتا ہے اوردوسرا وہ شخص جسے اللہ تعالیٰ نے مال دیا اور وہ دن رات اسے اللہ کی راہ میں صدقہ کرتا ہے‘‘ ۔  اسی اعلیٰ صفت کی بنیاد پر ابو بکر رضی اللہ عنہ کے ایمان کا وزن پوری امت کے ایمان سے کیا گیا ۔ وہ ان میں سے ہیں جن کے بارے میں باری جل وعلا نے یہ فرمایا : {وَالسَّابِقُونَ السَّابِقُونَ (10) أُولَئِكَ الْمُقَرَّبُونَ} [الواقعة: 10، 11] ترجمہ :’’اور جو سبقت لے گئے تو وہ سبقت لے گئے ،یہ وہ (خوش نصیب) ہیں جن کو نوازا گیا ہوگا قرب (خاص) سے‘‘۔ دوم : جائز حسد :دنیا کے معاملات میں دو شرائط کے ساتھ رشک جائز ہے ۔ پہلی شرط : برکت کی دعا اور اللہ تعالیٰ کے ذکر کے ساتھ ۔ دوسری شرط :اپنے مومن بھائی سے اس نعمت کے زوال کی تمنا نہ کی جائے ۔ سوم : مکرہ حسد : اپنے بھائی کی کوئی توصیف بیان کرنا اللہ کا نام لئے بغیر ، اور برکت کی دعا دئے بغیر ۔ جس شخص نے ایسا کیا گویا کہ اس نے اپنے بھائی کیلئے شیطان کے تکلیف دینے کا دروازہ کھول دیاہے ، اگرچہ وہ اس سے نعمت کے زوال کا متمنی نہیں تھا ، وہ چونکہ ذکر نہیں کرتا اس لئے مذموم ہے۔ اصل تو یہ ہے کہ انسان ہر وقت اللہ تعالیٰ کے ذکر میں مصروف رہے ،اللہ تعالیٰ نے ان لوگوں کی تعریف ومدح کی ہے جو اٹھتے بیٹھتے اور اپنے پہلؤوں پر اللہ تعالیٰ کا ذکر کرتے ہیں ۔ صرف اللہ کا ذکر مقصود نہیں بلکہ اس میں یہ چیز بھی شامل ہے کہ اپنے دیگرمسلمان بھائیوں کیلئے شیطانی ایذا رسانی کا دروازہ نہ کھولا جائے ۔ جیسا کہ عامر بن ربیعہ اور سہل بن سعد کے واقعہ میں آپ ملاحظہ کر چکے ہیں ۔  چہارم : حرام حسد : اگر کوئی حسد سابقہ شرائط سے عاری ہے تو وہ حرام کہلائے گا ، لہذا جس نے کسی کی تعریف کے وقت برکت کی دعا نہ دی ، اور اپنے بھائی سے نعمت کے زوال کی تمنا کی ، تو یہ قاتل نظر بد ہے ۔ اور اس طرح کی نظر بد صرف اور صرف نفسِ خبیثہ سے ہی صادر ہوتی ہے ۔ والعیاذ باللہ ، اس کی مثال یہود کے حسد کی مانند ہے ۔

  • فونٹ سائز:

    ب ب