کتاب: انوار المصابیح بجواب رکعات تراویح - صفحہ 111

مولانا حبیب الرحمن اعظمی نے خود عقیلی کے متعلق اپنی کتاب اعلام المرفوعہ میں لکھا ہے : ’’ اس کے علاوہ عقیلی سے اس باب میں (یعنی عطاء خراسانی کی تصنیف کے باب میں) سند پکڑنا غلط ہے ۔ اس لئے کہ محدثین ان کی تضعیف کا اعتبار نہیں کرتے ۔ (الاعلام ص۶) یہی مولانا حبیب الرحمن اپنی اسی کتاب (الاعلام المرفوعہ ص۸) میں امام نسائی کے متعلق لکھتے ہیں : ’’ ہاں نسائی نے ان کی (زبیر بن سعید کی ) تضعیف کی ہے ، مگر اولا ان کی جرح مبہم ہے ۔ دوسرے وہ متعنت ہیں ۔ لہٰذا ان کی تضعیف نامعتبر ہے‘‘ ۔ امام نسائی کتاب الضعفاء والمتروکین میں لکھتے ہیں : نعمان بن ثابت ابو حنیفة لیس بالقوی فی الحدیث انتهی حافظ ذہبی امام ابو حنیفہ رحمہ اللہ کے پوتے کے ترجمہ میں لکھتے ہیں : اسماعیل بن حماد بن النعمان بن ثابت الکوفی عن ابیه عن جده قال ابن عدی ثلثتهم ضعفاء ۔ یعنی ابن عدی نے کہا ہے کہ امام ابو حنیفہ رحمہ اللہ او ر ان کے لڑکے حماد اور ان کے پوتے اسماعیل یہ تینوں ضعیف ہیں ۔ (میزان الاعتدال) ظاہر ہے کہ نسائی کی طرح ابن عدی کی اس جرح کو بھی کم از کم امام صاحب کے متعلق تو تعنت ہی قرار دیا جائے گا ۔ اس طرح جارحین عیسی میں سے

  • فونٹ سائز:

    ب ب