کتاب: انوار المصابیح بجواب رکعات تراویح - صفحہ 131
وقد یطلق ذلک علی الثقة اذا روی المناکیر عن الضعفاء قال الحاکم قلت الدار قطنی فسلیمان بنت شرجیل قال ثقة قلت الیس عندہ مناکیر قال یحدث بہا عن قوم ضعفاء اما ہو فثقة انتہیٰ (الفع والتکمیل ص۱۴) ان دونوں جرحوں کے بعد امام ابو زرعہ کی تعدیل نقل کی ہے جنہوں نے لا باس بہٖ کہا ہے ۔ میزان کے شروع میں حافظ ذہبی نے جرح و تعدیل کے کچھ الفاظ بھی ذکر کئے ہیں ۔ الفاظ تعدیل کے متعلق لکھتے ہیں : فاعلی العبارات فی الرواة المقبولین ثبت حجة وثبت حافظ وثقة متقن وثقة تم ثقة ثم صدوق ، ولا باس بہ ولیس بہ باس ثم محلہ الصدق وجید الحدیث الخ : لفظ ثم سے ذہبی نے جو فرقِ مراتب کی طرف اشارہ کیا ہے اس سے معلوم ہوتا ہے کہ ان کے نزدیک لا باس بہٖ متوسط درجہ کا لفظ ہے ۔ حافظ عراقی نے شرح