کتاب: انوار المصابیح بجواب رکعات تراویح - صفحہ 163

قولہ : اب رہی قیام اللیل کی روایت ، تو اس میں بے شک جاء ابی فی رمضان کا لفظ ہے ، لیکن اس میں کوئی شک نہیں ہے کہ وہ راوی کا تصرف اور ادراج ہے ۔ (ص۳۷) ج: مسند احمد او رمجمع الزوائد کی جن روایتوں کی بنیاد پر آپ نے یہ عمارت کھڑی کی ہے ، ہم نے ثابت کر دیا کہ وہ بنیاد ہی غلط ہے ۔ لہٰذا اس بنیاد پر جو عمارت کھڑی کی جائے گی ، ظاہر ہے کہ وہ بھی غلط ہی ہو گی ۔ یہ لفظ ہرگز کسی راوی کا تصرف اور ادراج نہیں ہے ،بلکہ پورے واقعہ کے راوی اور عینی شاہد حضرت جابر رضی اللہ تعالیٰ عنہ ہی کا لفظ یہ بھی ہے ۔ دلائل اہل حدیث پر بحث ختم : تراویح کے باب میں مسلک اہل حدیث کی تیسری دلیل پر بھی ’’ علامہ‘‘ مئوی کے تمام ایرادات و نقوص ختم ہو گئے ۔ گویا اہل حدیث کے دلائل پر مؤلف ’’رکعات ِتراویح‘‘ نے جتنے اعتراضات اور شکوک و شبہات پیش کئے تھے ، ان

  • فونٹ سائز:

    ب ب