کتاب: انوار المصابیح بجواب رکعات تراویح - صفحہ 272

پس یزید بن رومان کے زیر بحث اثر پر ’’منقطع‘‘ ہونے کا جو اعتراض کیا گیا ہے اس سے صرف انقطاع کی علت کا اظہار مقصود نہیں ہے بلکہ اس اعتراض کا منشا یہ ہے کہ درمیان سے جو راوی ساقط ہے اس کی ذات بھی مجہول ہے اور اس کے اوصاف و احوال بھی مجہول ہیں اس لئے جب تک راوی کی ذات معلوم نہ ہو اس کی عدالت اور حفظ و ضبط وغیرہ تمام شرائط صحت متحقق نہ ہوں یہ روایت صحیح اور حجت نہیں ہو سکتی ۔

  • فونٹ سائز:

    ب ب