کتاب: انوار المصابیح بجواب رکعات تراویح - صفحہ 396

غیر لفظی ترجمہ : پھر چوتھے قرن میں (مقلدین کی) وہ جماعت پیدا ہوئی جو اللہ تعالی کے دین کے بارے میں اپنی زبان چلانے کی کم پروا کرتی ہے ۔ اور یہ بے احتیاطی لوگ اپنے امام ابو حنیفہ و امام مالک و امام الشافعی رحمہم اللہ ، ان اماموں نے تو اپنی تقلید کرنے سے (منع کر دیا ہے اور اس سے ) اپنی برأت کا اظہار کر دیا ہے ۔ یہ مقلدین جب اپنے امام کی کسی غلطی کی طر ف داری سے عاجز آ جاتے ہیں تو دعوی کر دیتے ہیں کہ اس پر تو سب کا اتفاق و اجماع ہے جب ان کے اس دعوی پر اعتراض کیا جاتا ہے کہ جن لوگوں سے اس مسئلہ کے بارے میںکچھ بھی مروی نہیں ہے ، ان کی طرف اس کے متعلق اجماع اور اتفاق کرنے کی نسبت تم کیسے کرتے ہو ؟ کیا ایسی جرأت کرتے ہوئے تم اللہ سے ڈرتے نہیں ؟ تو اس کے جواب میں اکابر مقلدین کہتے ہیں کہ جو بات علماء میں پھیل گئی اور اس کے قائلین کی طرف سے اس کی شہرت ہو گئی اور دوسرے لوگوں نے اس کے خلا ف کچھ نہیں کہا تو بس یہ ان کی طرف سے اجماع ہے کیونکہ یہ دین و تقوی والے لوگ تھے۔ ناممکن ہے کہ کوئی منکر بات سنیں اور اس پر نکیر نہ کریں ۔ اس سے ثابت

  • فونٹ سائز:

    ب ب