کتاب: دوستی اور دشمنی کا اسلامی معیار - صفحہ 25
[یٰٓاَیُّھَا الَّذِیْنَ اٰمَنُوْا لَا تَتَّخِذُوْا بِطَانَةً مِّنْ دُوْنِکُمْ لَا یَاْلُوْنَکُمْ خَبَالًا ۭ وَدُّوْا مَا عَنِتُّمْ ۚ قَدْ بَدَتِ الْبَغْضَاۗءُ مِنْ اَفْوَاہِھِمْ ښ وَمَا تُخْفِیْ صُدُوْرُھُمْ اَکْبَرُ ۭ قَدْ بَیَّنَّا لَکُمُ الْاٰیٰتِ اِنْ کُنْتُمْ تَعْقِلُوْنَ ١١٨؁ھٰٓاَنْتُمْ اُولَاۗءِ تُحِبُّوْنَھُمْ وَلَا یُحِبُّوْنَکُمْ وَتُؤْمِنُوْنَ بِالْکِتٰبِ کُلِّھٖ ۚوَاِذَا لَقُوْکُمْ قَالُوْٓا اٰمَنَّا ۑ وَاِذَا خَلَوْا عَضُّوْا عَلَیْکُمُ الْاَنَامِلَ مِنَ الْغَیْظِ ۭ قُلْ مُوْتُوْا بِغَیْظِکُمْ ۭ اِنَّ اللّٰہَ عَلِیْمٌۢ بِذَاتِ الصُّدُوْرِ ١١٩؁اِنْ تَمْسَسْکُمْ حَسَنَةٌ تَـسُؤْھُمْ ۡ وَاِنْ تُصِبْکُمْ سَیِّئَةٌ یَّفْرَحُوْا بِھَا ۭ] ترجمہ:مومنو! کسی غیر مذہب کے آدمی کو اپنا راز داں نہ بناؤ ،یہ لوگ تمہاری خرابی (اور فتنہ انگیزی کرنے ) میں کسی طرح کوتاہی نہیںکرتے اور چاہتے ہیں کہ (جس طرح ہو) تمہیں تکلیف پہنچے۔ ان کی زبانوں سے تودشمنی ظاہر ہوچکی ہے اور جو (کینے) ان کے سینوں میں مخفی ہیں وہ کہیں زیادہ ہیں ۔اگر تم عقل رکھتے ہوتو ہم نے تم کو اپنی آیتیں کھول کھول کر سنادی ہیں۔دیکھوتم ایسے( صاف دل )لوگ ہو کہ ان لوگوںسے دوستی رکھتے ہو ، حالانکہ وہ تم سے دوستی نہیں رکھتے ،اورتم سب کتابوں پر ایمان رکھتے ہو(اور وہ تمہاری کتاب کو نہیں مانتے ) اور جب تم سے ملتے ہیں تو کہتے ہیں کہ ہم ایمان لے آئے اورپھر جب الگ ہوتے ہیں تو تم پر غصہ کے سبب انگلیاں کاٹ کاٹ کھاتے ہیں ۔ان سے کہہ دو کہ (بدبختو!) اپنے غصہ ہی میں مرجاؤ۔اللہ تعالیٰ تمہارے دلوں کی باتوں سے خوب واقف ہے ۔اگر تمہیں آسودگی حاصل ہوتو ان کو بری لگتی ہے اور اگررنج پہنچے تو وہ خوش ہوتے ہیں۔