کتاب: درود -1 - صفحہ 59

اِبْرَاهِیْمَ وَ بَارِكْ عَلٰی مُحَمَّدٍ وَ عَلٰی آلِ مُحَمَّدٍ کَمَا بَارَکْتَ عَلٰی آلِ اِبْرَاهِیْمَ فِی الْعَالَمِیْنَ اِنَّكَ حَمِیْدٌ مَجِیْدٌ» وَالسَّلاَمُ کَمَا عَلَّمْتُمْ حضرت ابو مسعود انصاری رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سعد بن عبادہ رضی اللہ عنہ کے ہاں تشریف لائے۔ بشیر بن سعد رضی اللہ عنہ نے عرض کیا ’’ اے اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم ! اللہ تعالیٰ نے ہمیں آپ صلی اللہ علیہ وسلم پر درود بھجنے کا حکم دیاہے ہم آپ صلی اللہ علیہ وسلم پر کس طرح درود بھیجیں؟‘‘ ابو مسعود انصاری رضی اللہ عنہ کہتے ہیں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم خاموش ہوگئے یہاں تک کہ ہم نے تمنا کی

  • فونٹ سائز:

    ب ب