کتاب: فتنہ وضع حدیث اور موضوع احادیث کی پہچان - صفحہ 59
’’تمہاری مثال اے علی! عیسی بن مریم ؑ کی ہے جس سے ایک گروہ نے محبت کی تو مبالغہ کیا اور ایک گروہ نے دشمنی کی تو مبالغہ کیا‘‘۔ ناد علیا مظہرالعجائب تجدہ لک عونا فی النوائب فی کل غم وہم ’’علی جو مظہر عجائب ہیں کوپکارو توتم ان کو مشکلات اور پریشانیوں میں مددگار پاؤ گے‘‘ یہ گمراہ کن وضوع روایت عقیدہ اہلِ تشیع کی بنیادی کڑی ہے اور اسی سے وہ علی رضی اللہ عنہ کومشکل کشا سمجھتے ہیں۔ یہ مشرکانہ روایت بہت سی دوکانوں اور مکانوں میں آویزاں نظر آتی ہے۔ صلی علیّ الملئکة علی علیّ بن ابی طالب سبع سنین ولم یصعد شہادة ان لا الہ الا اللہ من الارض الی السماء الا منی ومن علی بن ابی طالب ’’فرشتوں نے مجھ پر اورعلی بن ابی طالب پر سات سال تک درود بھیجا میرے ا ور علی بن ابی طالب کے بغیر کلمہ شہادت آسمان تک نہیں پہنچ سکتا‘‘۔ ستکون فتنةفان ادرکہا احد منکم فعلیہ بخصلتین کتاب اللہ وعلی ابن ابی طالب فانی سمعت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم یقول وہو آخذ بیدی علی ہذا علی اوّل من آمن بی وہو اوّل من یصافحنی یوم القیامة وہو فاروق ہذہ الامة یفرق بین الحق والباطل ’’حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ ایک فتنہ آنے والا ہے تم میں سے جو بھی اس وقت موجود ہے وہ دوچیزوں کو اختیار کرے اللہ کی کتاب اور علی بن ابی طالب کو کیونکہ میں نے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کو یہ کہتے ہوئے سناہے اور آپ اس پر میراہاتھ پکڑے ہوئے تھے کہ علی پہلا آدمی ہے جو مجھ پر ایمان لایا اور وہ پہلا آدمی ہو گا جومجھ سے قیامت کے دن مصافحہ کرے گا وہ اس امت کا فاروق ہے جو حق و باطل کے درمیان فرق کرے گا‘‘ ۔ عبدت اللہ مع رسولہ قبل ان یعبدہ رجل من ہذہ الامة خمس سنین او سبع سنین