کتاب: فتنہ وضع حدیث اور موضوع احادیث کی پہچان - صفحہ 70

قاضی مجد الدین شیرازی کہتے ہیں: "ما ورد في فضل ابي حنيفه والشافعي او ذمهما لا يصح في هذا الباب شيئ عن رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم على الخصوص " ’’امام ابو حنیفہ رحمہ اللہ اور امام شافعی رحمہ اللہ کی فضیلت یا ان کی مذمت میں جو روایات بیان کی جاتی ہیں اس باب میں بالخصوص کسی روایت کا انتساب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف صحیح نہیں‘‘۔ بادشاہوں اور امیروں کی خوشنودی: وضع حدیث کاایک بڑا سبب یہ بھی تھا کہ لوگ اپنی ہی جیسے دوسرے انسان کی خوشنودی اور تقرب حاصل کرنے کے لئے، اس کی نظر میں سرخرو ہونے اور اس سے تھوڑی سی منفعت حاصل کرنے کے لئے کوشاں رہتے تھے۔ وہ امرا اور سلاطین کے درباروں میں جاتے تھے اور ان کو خوش کرنے کے لئے جھوٹی روایات بیان کرتے تھے، مفادپرست، لالچی اور درباری لوگ ہمیشہ

  • فونٹ سائز:

    ب ب