کتاب: انسان کی عظمت کی حقیقت - صفحہ 15

(4)امام حسین رضی اللہ عنہ (5)زین العابدین(6)امام باقر.... قدر آفاقی نے تصوف کی مخالفت سے متعلق اہل سنت کا رویہ ذکر کیا ہے لکھتے ہیں : قدر آفاقی نے تصوف کی مخالفت سے متعلق اہل سنت کا رویہ ذکر کیا ہے لکھتے ہیں : اہل سنت والجماعت نے صوفیاء کے خلاف اپنا طرز عمل کافی آہستگی سے ظاہر کیا نیز وہ کبھی ان کو مطعون کرنے میں متفق رائے نہیں ہوئے۔ سُنیوں کے صرف دو گروہوں نے تصوف پر تنقید کی ۔امام احمد بن حنبل رحمہ اللہ نے تصوف پریہ تنقید کی کہ وہ ظاہر عبادات کے مقابلہ میں مراقبہ پر زور دیتا ہے اور روح کیلئے ذات خداوندی سے براہ راست تقرب کی راہ نکالتا ہے اور بعد ازاں ایک مسلمان کو شرطی فرائض کی پابندی سے آزاد کر دیتا ہے چنانچہ آپ رحمہ اللہ کے شاگرد خاص خشیش رحمہ اللہ اور ابو زُرعہ رحمہ اللہ نے تصوف کو زنادقہ کے کفر و الحاد کی ایک شاخ =الروحانیہ=میں شامل کیا ہے ۔ اہل سنت والجماعت نے صوفیاء کے خلاف اپنا طرز عمل کافی آہستگی سے ظاہر کیا نیز وہ کبھی ان کو مطعون کرنے میں متفق رائے نہیں ہوئے۔ سُنیوں کے صرف دو گروہوں نے تصوف پر تنقید کی ۔امام احمد بن حنبل رحمہ اللہ نے تصوف پریہ تنقید کی کہ وہ ظاہر عبادات کے مقابلہ میں مراقبہ پر زور دیتا ہے اور روح کیلئے ذات خداوندی سے براہ راست تقرب کی راہ نکالتا ہے اور بعد ازاں ایک مسلمان کو شرطی فرائض کی پابندی سے آزاد کر دیتا ہے چنانچہ آپ رحمہ اللہ کے شاگرد خاص خشیش رحمہ اللہ اور ابو زُرعہ رحمہ اللہ نے تصوف کو زنادقہ کے کفر و الحاد کی ایک شاخ =الروحانیہ=میں شامل کیا ہے ۔ اہل سنت والجماعت نے صوفیاء کے خلاف اپنا طرز عمل کافی آہستگی سے ظاہر کیا نیز وہ کبھی ان کو مطعون کرنے میں متفق رائے نہیں ہوئے۔ سُنیوں کے صرف دو گروہوں نے تصوف پر تنقید کی ۔امام احمد بن حنبل رحمہ اللہ نے تصوف پریہ تنقید کی کہ وہ ظاہر عبادات کے مقابلہ میں مراقبہ پر زور دیتا ہے اور روح کیلئے ذات خداوندی سے براہ راست تقرب کی راہ نکالتا ہے اور بعد ازاں ایک مسلمان کو شرطی فرائض کی پابندی سے آزاد کر دیتا ہے چنانچہ آپ رحمہ اللہ کے شاگرد خاص خشیش رحمہ اللہ اور ابو زُرعہ رحمہ اللہ نے تصوف کو زنادقہ کے کفر و الحاد کی ایک شاخ =الروحانیہ=میں شامل کیا ہے ۔ ان کے علاوہ دوسرا گروہ معتزلہ اور ظاہریوں پر مشتمل تھا ۔ یہ عشق کے ذریعے خالق

  • فونٹ سائز:

    ب ب