کتاب: اسلام اور مستشرقین - صفحہ 142
پروفیسر فیلپ خوری ہٹی نے اگرچہ اپنی بعض تحریروں میں اسلام کے حق میں کلمہ خیر بھی کہا ہے لیکن اس کی اس کتاب میں کئی ایک ایسے تاریخی واقعات منقول ہیں کہ جن کی کوئی اصل نہیں ہے۔ ہٹی کا کہنا ہے کہ خلیفہ عبد الملک بن مروان نے بیت المقدس میں ’قبۃ الصخرۃ‘ اس لیے بنوایا تھا کہ مکہ کے حاجیوں کے قافلوں کا رخ بیت اللہ سے ہٹا کر بیت المقدس کی طرف پھیر دے کیونکہ بیت اللہ پر اس وقت حضرت عبد اللہ بن زبیررضی اللہ عنہ کا قبضہ تھا۔ اس کے الفاظ ہیں: In 691 Abd-al-Malik erected in Jerusalem the magnificent Dome of the Rock (Qubbat al-Sakhrah), wrongly styled by Europeans "the Mosque of Umar", in order to divert thither the pilgrimage from Makkah which was held by his rival ibn-al-Zubayr. 24 ہٹی نے عبد الملک بن مروان کے بارے اس خبر کی بنیاد’ تاریخ یعقوبی‘ کو بنایا ہے کہ جس کے مستند نہ ہونے کا ذکر پہلے گزر چکا ہے۔ یہ بات البتہ درست ہے کہ عبد الملک بن مروان (۲۔۶۵ھ) کے مقابلے میں حضرت عبد اللہ بن زبیر (۲۔ ۷۳ھ) خلافت کے زیادہ حقدار اور اہل تھے۔ وہ نہ صرف صحابی رسول صلی اللہ علیہ وسلم تھے بلکہ یزید کے بعد مسلمانوں کے ۹ سال تک خلیفہ رہے۔ ان کی خلافت پہلے حجاز میں قائم ہوئی اور اس کے بعد عراق، مصر اور دیگر بلادِ اسلامیہ تک پھیل گئی۔ 25 ہاملٹن گِب (Hamilton Alexander Rosskeen Gibb) ہاملٹن الیگزینڈر راسکین Hamilton Alexander Rosskeen Gibb (۱۸۹۵۔۱۹۷۱ء) گِب اسکاٹش مستشرق ہے۔ ابتدائی تعلیم یونیورسٹی آف ایڈنبرا سے حاصل کی۔ اس نے پہلی جنگ عظیم کے دوران برطانوی شاہی رجمنٹ (Royal Regiment of Artillery) کے ایک سپاہی اور آفیسر کے طور فرانس اور اٹلی میں کام کیا۔ اسے اس کی جنگی خدمات پر ماسٹر آف آرٹس کا ایوارڈ بھی دیا گیا۔ جنگ کے خاتمے پر اس نے لندن یونیورسٹی میں School of Oriental and African Studies میں عربی زبان کی تعلیم حاصل کی اور ۱۹۲۲ء میں یہاں سے ہی ایم اے کیا۔ گِب ۱۹۳۰ء میں اسی یونیورسٹی میں پروفیسر مقرر ہوا اور ۱۹۳۷ء تک اس نے یہاں عربی زبان کی تعلیم دی۔ وہ انسائیکلو پیڈیا آف اسلام (Encyclopaedia of Islam)کا ایڈیٹر بھی رہا۔ ۱۹۵۵ء میں ہارورڈ یونیورسٹی کو بطور عربی پروفیسر جائن کیا۔26 اس کی معروف کتب میں "Arabic Literature: An Introduction" اور "Modern Trends in Islam" اور "Studies on the Civilization of Islam" اور "Shorter Encyclopedia of Islam" ہے جس کی اس نے ایڈیٹنگ کی ہے اور یہ ۱۹۵۳ء میں شائع ہواہے۔ تاریخ اسلام پر اس کی ایک کتاب ہے جو "Mohammedanism: An Historical Survey" کے نام سے پہلے ۱۹۴۹ء میں شائع ہوئی اور پھر ۱۹۸۰ء میں ایک نئے عنوان"Islam: An Historical Survey" کے ساتھ شائع ہوئی۔27