کتاب: اسلام اور مستشرقین - صفحہ 18
(23)۔ أیضاً: ص۱۵۔ (23)۔ أیضاً۔ (24)۔ أیضاً۔ (25)۔ أیضاً: ص۱۷۔ (26)۔ محمد عبد اللہ الشرقاوی الدکتور، الاستشراق والغارۃ علی الفکر الإسلامی، دار الھدایۃ ، القاھرۃ، ۱۹۸۹ئ، ص۱۱۔ (27)۔ آراء المستشرقین حول القرآن الکریم وتفسیرہ: ص۳۸۔ (28)۔ خالد إبراھیم المحجوبی، الاستشراق والإسلام: مطارحات نقدیۃ للطروح الاستشراقیۃ، أکادیمیۃ الفکر الجماھیری، مصر، ۲۰۱۰ئ، ص۱۸ـ۲۰۔ (29)۔ الاستشراق الإسرائیلی فی المصادر العبریۃ: ص۱۳۔ (30)۔ الاستشراق بین الحقیقۃ والتضلیل: ص۲۵۔ (31)۔ الاستشراق الإسرائیلی فی المصادر العبریۃ: ص۶۹۔ (32)۔ الاستشراق بین الحقیقۃ والتضلیل: ص۲۰۔ (33)۔ الاستشراق الإسرائیلی فی المصادر العبریۃ: ص۷۲۔ (24)۔ أیضاً: ص۷۳۔ (35)۔ أیضاً: ص۷۶۔ (36)۔ أیضاً: ص۷۷۔ (37)۔ أیضاً: ص۷۸۔ (38)۔ الاستشراق الإسرائیلی فی المصادر العبریۃ: ص۸۰۔ (39)۔ آراء المستشرقین حول القرآن الکریم وتفسیرہ: ص۲۹۔ (40)۔ أیضاً: ص۳۰۔ (41)۔ آراء المستشرقین حول القرآن الکریم وتفسیرہ: ص۳۵۔ (42)۔ أیضاً: ص۳۶۔۳۷۔ (43)۔ الاستشراق الإسرائیلی فی المصادر العبریۃ: ص۲۴۔ (44)۔ الاستشراق بین الحقیقۃ والتضلیل: ص۲۸ـ ۲۹۔ (45)۔ الاستشراق بین الحقیقۃ والتضلیل: ۵۸ـ۵۹۔ (46)۔ أیضاً: ص۵۹۔