کتاب: اسلام اور مستشرقین - صفحہ 37
چوتھی فصل میں رچرڈبیل نے اسلوب قرآن کو موضوع بحث بنایا ہے اور اس کا کہنا یہ ہے کہ قرآنی اسلوب کلام کاہنوں کے طریقہ گفتگو ’سجع‘ پر قائم ہے۔34 اس اعتراض کا جواب اس باب کے آخر میں ہم تفصیل سے بیان کریں گے۔ پانچویں فصل میں اس نے سورتوں کو موضوع بحث بنایا ہے۔ اس میں اس نے قصر وطول، عبارتوں کی تکرار اور قرآنی نحو پر گفتگو کی ہے۔ بعض مقامات پر وہ قرآن مجید کی کچھ عبارتوں میں اضافے بھی تجویز کرتا ہے کیونکہ اس کے بقول وہ عبارات نامکمل ہیں اور یہ اضافے ان کی تکمیل کا باعث ہیں۔35چھٹی فصل میں رچرڈ بیل نے قرآن مجید کی ترتیب نزولی پر گفتگو کی ہے جبکہ ساتویں فصل قرآن مجید کی بعض مخصوص آیات کے معانی ومفاہیم کی وضاحت پر مبنی ہے۔ یہاں اس نے بعض مقامات پر قرآن مجید میں انجیل سے استفادہ کی علامات دکھانے کی کوشش کی ہے۔36 آٹھویں فصل کا مبحث قرآن مجید کے موضوعات اور اس کے مصادر ہیں جس میں