کتاب: طہارت کے مسائل - صفحہ 49

(مسئلہ نمبر96)حائضہ کے ہاتھوں کا کھانا ، حائضہ کا اپنے خاوند کا سر دھونا،خاوند کے سر میں کنگھی کرنا نیز حائضہ کا جوٹھا کھانا جائز ہے۔ عَنْ عَائِشَۃَ رَضِیَ اللّٰہُ عَنْہَا قَالَ :کُنْتُ اَشْرَبُ وَاَنَا حَائِضٌ ثُمَّ اَنَاوِلُہُ النَّبِیَّ صلی اللہ علیہ وسلم فَیَضَعُ فَاہُ عَلٰی مَوْضِعِ فِیَّ فَیَشْرَبُ وَاَتَعَرَّقُ الْعَرْقَ وَاَنَا حَائِضٌ ثُمَّ اَنَاوِلُہُ النَّبِیَّ صلی اللہ علیہ وسلم فَیَضَعُ فَاہُ عَلٰی مَوْضِعِ فِیَّ ۔رَوَاہُ مُسْلِمٌ حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں کہ میں حیض کی حالت میں پانی پیتی اور برتن نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو دے دیتی،آپ صلی اللہ علیہ وسلم برتن سے اسی جگہ منہ رکھ کر پانی پیتے جہاں سے میں نے منہ رکھ کر پیا ہوتا(اسی طرح)حیض کی حالت میں ہڈی سے گوشت کھا کر نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو دیتی تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم اسی جگہ سے کھاتے جہاں سے میں نے کھایا ہوتا تھا۔اسے مسلم نے روایت کیاہے۔ عَنْ عَائِشَۃَ رَضِیَ اللّٰہُ عَنْہَا قَالَتْ :کُنْتُ اَغْسِلُ رَاْسَ رَسُوْلِ اللّٰہِ صلی اللہ علیہ وسلم وَاَنَا حَائِضٌ۔رَوَاہُ مُسْلِمٌ حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں کہ میں حالت حیض میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا سر دھویا کرتی تھی۔اسے مسلم نے روایت کیاہے۔ عَنْ عَائِشَۃَ رَضِیَ اللّٰہِ عَنْہَا قَالَتْ :کَانَ رَسُوْلُ اللّٰہِ صلی اللہ علیہ وسلم یَتَّکِیْئُ فِیْ حَجْرِیْ وَاَنَا حَائِضٌ فَیَقْرَأُ الْقُرْآنَ ۔رَوَاہُ مُسْلِمٌ حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم میری گود میں تکیہ لگا کر قرآن پاک کی تلاوت کرتے،حالانکہ میں حالت حیض میں ہوتی۔اسے مسلم نے روایت کیاہے۔ عَنْ عَائِشَۃَ رَضِیَ اللّٰہُ عَنْہَا اَنَّہَا قَالَتْ کَانَ رَسُوْلُ اللّٰہِ صلی اللہ علیہ وسلم یُدْنِیْ اِلَیَّ رَاَسَہُ وَاَنَا فِیْ حُجْرَتِی فَاُرَجِّلُ رَاْسَہُ وَاَنَا حَائِضٌ ۔رَوَاہُ مُسْلِمٌ

  • فونٹ سائز:

    ب ب