کتاب: طہارت کے مسائل - صفحہ 61

عمل کرنا شروع کرنا چاہئے۔ (مسئلہ نمبر101)مذکورہ مستحاضہ کو اپنے جیسی خواتین(اپنے ملک،اپنے علاقہ،اپنی عمر، اپنے جتنے بچوں والی خواتین)کی عادت کو سامنے رکھتے ہوئے مدت حیض کا تعین چھ یا سات دن شمار کرنے کے بعد استحاضہ کے احکام پر عمل کرنا چاہئے۔ عَنْ حَمْنَۃَ بِنْتِ جَحْشٍ رضی اللہ عنہ قَالَتْ :کُنْتُ اُسْتَحَاضُ حَیْضَۃً کَبِیْرَۃً شَدِیْدَۃً فَاَتَیْتُ النَّبِیَّ صلی اللہ علیہ وسلم اَسْتَفْتِیْہِ وَاَخْبِرُہُ فَوَجَدْتُہُ فِیْ بَیْتِ اُخْتِیْ زَیْنَبَ بِنْتِ جَحْشٍ فَقُلْتُ یَا رَسُوْلَ اللّٰہِ صلی اللہ علیہ وسلم اِنِّی اُسْتَحَاضُ حَیْضَۃً کَبِیْرَۃً شَدِیْدَۃً فَمَا تَامُرُنِیْ فِیْہَا قَدْ مَنَعَتْنِیْ الصِّیَامَ وَالصَّلَاۃَ ؟ قَالَ ((اَنْعَتُ لَکِ الْکُرْسُفَ فَاِنَّہُ یُذْہِبُ الدَّمَ )) قَالَتْ : ہُوَ اَکْثَرُ مِنْ ذٰلِکَ ؟ قَالَ : ((فَتَلَجَّمِیْ )) قَالَتْ ہُوَ اَکْثَرُ مِنْ ذٰلِکَ ؟ قَالَ : ((فَاتَّخِذِیْ ثَوْبًا )) قَالَتْ :ہُوَ اَکْثَرُ مِنْ ذٰلِکَ اِنَّمَا اَثُجُّ ثَجًّا ؟ فَقَالَ النَّبِیُّ صلی اللہ علیہ وسلم (( سَاٰ مُرُکِ بِاَمْرَیْنِ : اَیَّہُمَا صَنَعْتِ اَجْزَاَ عَنْکِ فَاِنْ قَوِیْتِ عَلَیْہِمَا فَاَنْتِ اَعْلَمُ)) فَقَالَ : (( اِنَّمَا ہِیَ رَکْضَۃٌ مِنَ الشَّیْطَانَ فَتَحَیَّضِیْ سِتَّۃَ اَیَّامٍ اَوْ سَبْعَۃَ اَیَّامٍ فِیْ عِلْمِ اللّٰہِ ثُمَّ اغْتَسِلِیْ فَاِذَا رَاَیْتِ اَنَّکِ قَدْ طَہُرْتِ وَاسْتَنَقَاْتِ فَصَلِّی اَرْبَعًاوَعِشْرِیْنَ لَیْلَۃً اَوْ ثَلاَثًا وَعِشْرِیْنَ لَیْلَۃً وَاَیَّامَہَا وَصُوْمِیْ وَصَلِّی فَاِنَّ ذٰلِکَ یُجْزِئُکِ وَکَذٰلِکِ فَافْعَلِیْ کَمَا تَحِیْضُ النِّسَائُ وَکَمَا یَطْہُرْنَ لِمِیْقَاتِ حَیْضِہِنَّ وَطُہْرِہِنَّ)) ۔رَوَاہُ التِّرْمِذِیُّ (حسن) حضرت حمنہ بنت جحش رضی اللہ عنہا کہتی ہیں مجھے کثرت سے مسلسل استحاضہ کا خون آیا کرتاتھا،میں نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم سے مسئلہ دریافت کرنے کے لئے حاضر ہوئی۔اس وقت آپ صلی اللہ علیہ وسلم میری بہن زینب بنت جحش رضی اللہ عنہا کے گھر میں تھے۔میں نے عرض کیا ’’اے اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم !مجھے استحاضہ کی بیماری ہے اور خون بڑی کثرت سے مسلسل آتا ہے جس نے مجھے نماز،روزے سے روک رکھاہے اس کے بارے میں

  • فونٹ سائز:

    ب ب