کتاب: طہارت کے مسائل - صفحہ 64

أَلْغُسْـــــــــلُ غسل کے مسائل (مسئلہ نمبر103) (مسئلہ نمبر104)بیوی اور خاوند کی شرمگاہ مل جانے پر غسل واجب ہو جاتا ہے،خواہ انزال ہو یا نہ ہو۔ عَنْ اَبِیْ ہُرَیْرَۃَ رضی اللہ عنہ عَنِ النَّبِیِّ صلی اللہ علیہ وسلم قَالَ : (( اِذَا جَلَسَ بَیْنَ شُعَبِہَا الْاَرْبَعِ ثُمَّ جَہَدَہَا فَقَدْ وَجَبَ الْغُسْلُ )) ۔مُتَّفَقٌ عَلَیْہِ حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا’’جب میاں بیوی سے صحبت کرے،تو اس پر غسل واجب ہوجاتاہے۔‘‘اسے بخاری اور مسلم نے روایت کیاہے (مسئلہ نمبر105)عورت یا مرد کو احتلام ہو تو غسل واجب ہوجاتاہے۔ عَنْ اُمِّ سُلَیْمٍ رَضِیَ اللّٰہُ عَنْہَا اَنَّہَا سَاَلَتْ نَبِیَّ اللّٰہِ صلی اللہ علیہ وسلم عَنِ المَرْاَۃِ تَرَی فِیْ مَنَامِہَا مَا یَرَی الرَّجُلُ ؟ فَقَالَ رَسُوْلُ اللّٰہِ صلی اللہ علیہ وسلم (( اِذَا رَاَتْ ذٰلِکَ المَرَاَۃُ فَلْتَغْتَسِلْ )) فَقَالَتْ اُمُّ سُلَمَۃَ رَضِیَ اللّٰہُ عَنْہَا وَاسْتَحْیَیْتُ مِنْ ذٰلِکَ قَالَتْ :وَہَلْ یَکُوْنُ ہٰذَا؟ فَقَالَ نَبِیُّ اللّٰہِ صلی اللہ علیہ وسلم (( نَعَمْ فَمِنْ اَیْنَ یَکُوْنَ الشَّبَہُ اِنَّ مَائَ الرَّجُلِ غَلِیْظٌ اَبْیَضُ وَمَائَ المَرْاَۃِ رِقِیْقٌ اَصَفَرُ فَمِنْ اَیِّہِمَا عَلاَ اَوْ سَبَقَ یَکُوْنُ مِنْہُ الشَّبْہُ )) ۔رَوَاہُ مُسْلِم حضرت ام سلیم رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ میں نے نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم سے مسئلہ دریافت کیا کہ اگر عورت کو مرد کی طرح نیند میں احتلام ہوجائے تو اسے کیا کرنا چاہئے؟رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا’’عورت کو غسل کرنا چاہئے۔‘‘حضرت ام سلمہ رضی اللہ عنہا کہتی ہیں کہ مجھے (یہ بات سن کر)شرم محسوس ہوئی اور میں نے رسول

  • فونٹ سائز:

    ب ب