کتاب: طہارت کے مسائل - صفحہ 65

اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے دریافت فرمایا’’کیا عورت کو بھی احتلام ہوجاتاہے؟‘‘رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا’’ہاں‘‘ورنہ بچہ عورت کے مشابہ کیوں ہوتا،آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا’’مرد کا نطفہ سفید اور گاڑھا ہوتا ہے جب کہ عورت کا نطفہ پتلا اور زرد ہوتا ہے۔دونوں میں سے جو بھی غالب آجائے بچہ اسی کے مشابہ ہوتاہے۔اسے مسلم نے روایت کیاہے۔ (مسئلہ نمبر106)منی خارج ہونے پر غسل واجب ہوجاتاہے۔ وضاحت حدیث مسئلہ نمبر155کے تحت ملاحظہ فرمائیں۔ (مسئلہ نمبر107)غسل جنابت میں پہلے دونوں ہاتھ دھونے چاہئیں پھر طہارت حاصل کرکے وضو کرنا چاہئے۔ عَنْ عَائِشَۃَ رَضِیَ اللّٰہُ عَنْہَا اَنَّ رَسُوْلَ اللّٰہِ صلی اللہ علیہ وسلم کَانَ اِذَا اغْتَسَلَ مِنَ الْجَنَابَۃِ بَدَاَ فَغَسَلَ یَدَیْہِ قَبْلَ اَنْ یُدْخِلَ یَدَہُ فِیْ الْاِنَائِ ثُمَّ تَوَضَّأَ مِثْلَ وُضُوْئِ ہِ لِلصَّلَاۃِ ۔رَوَاہُ مُسْلِمٌ حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم جب غسل جنابت فرماتے تو برتن میں ہاتھ ڈالنے سے پہلے دونوں ہاتھ دھوتے،پھر نماز کی طرح وضو کرتے۔(پھر غسل فرماتے)اسے مسلم نے روایت کیاہے۔ (مسئلہ نمبر108)غسل جنابت کا مسنون طریقہ یہ ہے۔ عَنْ عَائِشَۃَ رَضِیَ اللّٰہُ عَنْہَا قَالَتْ :کَانَ رَسُوْلُ اللّٰہِ صلی اللہ علیہ وسلم اِذَا اغْتَسَلَ مِنَ الْجَنَابَۃِ یَبْدَاُ فَیَغْسِلُ یَدَیْہِ ثُمَّ یُفْرِغُ بِیَمِیْنِہٖ عَلَی شِمَالِہِ فَیَغْسِلُ فَرْجَہُ ثُمَّ یَتَوَضَّأُ وُضُوْئَ ہُ لِلصَّلَاۃِ ثُمَّ یَاخُذُ الْمَائَ فَیُدْخِلُ اَصَابِعَہُ فِیْ اُصُوْلِ الشَّعْرِ حَتَّی اِذَا رَاَی اَنْ قَدِ اسْتَبْرَاَ حَفَنَ عَلَی رَاسِہِ ثَلاَثَ حَفَنَاتٍ ثُمَّ اَفَاضَ عَلَی سَائِرِ جَسَدِہِ ثُمَّ غَسَلَ رِجْلَیْہِ ۔مُتَّفَقٌ عَلَیْہِ حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ جب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم غسل جنابت فرماتے توپہلے اپنے

  • فونٹ سائز:

    ب ب