کتاب: طلاق کے مسائل - صفحہ 70

وَدَفَّنْتُکِ)) رَوَاہُ ابْنُ مَاجَۃَ (حسن) حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کہتی ہیں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم قبرستان بقیع سے (ایک جنازہ پڑھ کر )واپس تشریف لائے تو میرے سر میں شدید درد تھا میں نے کہا ’’ہائے میرا سر پھٹا جا رہا ہے۔‘‘آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا ’’تمہارا نہیں بلکہ میرا سر پھٹا جارہاہے۔‘‘پھر فرمایا ’’عائشہ ( رضی اللہ عنہا )! اگر تو مجھ سے پہلے فوت ہو گئی تو تمہارے سارے کام میں خود کروں گا تجھے غسل دوں گا تجھے کفن پہناوں گاتمہاری نمازجنازہ پڑھاؤں گا اور خود تمہاری تدفین کروں گا۔‘‘اسے ابن ماجہ نے روایت کیا ہے۔ عَنْ عَائِشَۃَ رَضِیَ اللّٰہُ عَنْہَا قَالَتْ : کُنْتُ اَشْرَبُ وَ اَنَا حَائِضٌ ثُمَّ اُنَاوِلُہُ النَّبِیَّ صلی اللہ علیہ وسلم فَیَضَعُ فَاہُ عَلٰی مَوْضِعِ فِیَّ فَیَشْرَبُ وَ اَتَعَرَّقُ الْعَرْقَ وَ اَنَا حَائِضٌ ثُمَّ اُنَاوِلُہُ النَّبِیَّ صلی اللہ علیہ وسلم فَیَضَعُ فَاہُ عَلٰی مَوْضِعِ فِیَّ ۔ رَوَاہُ مُسْلِمٌ حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں کہ میں حیض کی حالت میں پانی پیتی اور برتن نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو دے دیتی ،آپ صلی اللہ علیہ وسلم برتن سے اسی جگہ منہ رکھ کر پانی پیتے جہاں سے میں نے منہ رکھ کر پیا ہوتا ،ہڈی سے گوشت کھا کر نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو دیتی تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم اسی جگہ سے کھاتے تھے جہاں سے میں نے کھایا ہوتا ۔‘‘اسے مسلم نے روایت کیا ہے۔ مسئلہ نمبر79:کاشانہ نبوی صلی اللہ علیہ وسلم میں سوکناپے کی نازبرداری۔ عَنْ اَنَسٍ رضی اللہ عنہ قَالَ : کَانَ النَّبِیُّ صلی اللہ علیہ وسلم عِنْدَ بَعْضِ نِسَائِہٖ فَاَرْسَلَتْ اِحْدَی اُمَّہَاتِ الْمُؤْمِنِیْنَ بِصَحْفَۃٍ فِیْہَا طَعَامٌ ، فَضَرَبَتِ الَّتِیْ النَّبِیُّ صلی اللہ علیہ وسلم فِیْ بَیْتِہَا یَدَ الْخَادِمِ فَسَقِطَتِ الصَّفْحَۃُ فَانْفَلَقَتْ ، فَجَمَعَ النَّبِیُّ صلی اللہ علیہ وسلم فِلَقَ الصَّحْفَۃِ ثُمَّ جَعَلَ یَجْمَعُ فِیْہَا الطَّعَامَ الَّذِیْ کَانَ فِی الصَّحْفَۃِ وَ یَقُوْلُ : غَارَتْ اُمُّکُمْ ثُمَّ حَبَسَ الْخَادِمَ حَتّٰی أَتٰی بِصَحْفَۃٍ مِنْ عِنْدِ الَّتِیْ ہُوَ فِیْ بَیْتِہَا ، فَدَفَعَ الصَّحْفَۃَ الصَّحِیْحَۃَ اِلَی الَّتِیْ کُسِرَتْ صَحْفَتُہَا وَ اَمْسَکَ الْمَکْسُوْرَۃَ فِیْ بَیْتِ الَّتِیْ کُسِرَتْ فِیْہِ ۔ رَوَاہُ الْبُخَارِیُّ حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم اپنی (باری کے مطابق )ایک زوجہ محترمہ کے ہاں مقیم تھے اتنے میں ایک دوسری زوجہ محترمہ نے ایک برتن میں کھانا بھیجا ۔گھر والی بیوی صاحبہ نے

  • فونٹ سائز:

    ب ب