کتاب: میں توبہ تو کرنا چاہتا ہوں لیکن؟ - صفحہ 6

کتاب: میں توبہ تو کرنا چاہتا ہوں لیکن؟ مصنف: محمد بن صالح المنجد پبلیشر: مکتبہ دارالسلام ترجمہ: آج کل لوگوں کا عالم یہ ہے کہ دن رات کئی قسم کے گناہ کرتے ہیں۔ پھر ان میں سے کچھ ایسے ہیں جو گناہوں کو معمولی سمجھتے ہیں۔اور ان پر مصر رہتے ہیں۔ اس کتاب توبہ کا صحیح مفہوم اس کی شروط اور اس کے فوائد بیان کئے گئے ہیں جس کا بنیادی ماحاصل یہ ہے کہ یہ سب اسی وقت ممکن ہے کہ جب انسان توبہ اسی عزم کے ساتھ کرے کہ وہ دوبارہ اس معصیت کے قریب بھی نہیں بھٹکے گا۔ گناہوں سے دوری کا احساس اور توبہ کی اہمیت کے بیان کے لئے کتاب نہایت مفید اور مؤثر ہے۔ مقدمہگناہوں کو حقیر سمجھنے کا خطرہ اللہ مجھ پر آپ پر رحم فرمائے، آپ کو علم ہونا چاہیے کہ اللہ تعالیٰ نے بندوں کو لازمی طور پر اخلاص کے ساتھ توبہ کرنے کا حکم دیا ہے۔ چنانچہ اللہ تعالیٰ فرماتے ہیں:- يَـٰٓأَيُّہَا ٱلَّذِينَ ءَامَنُواْ تُو بُوا اِلَی اللہِ تَوبَۃً نَصُوحاً (سُورَةُ التّحْریم( اے ایمان والو اللہ کے حضور سچی توبہ کرو۔ اور توبہ کے لیے ہمیں مہلت بھی عطا فرمائی۔ ایک تو وہ ہے جو کراماً کاتبین کے عمل لکھنے سے پہلے ملتی ہے۔ چنانچہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: إن صاحب الشمال ليرفع القلم ست ساعات عن العبد المسلم المخطيء أو المسيء، فإن ندم و استغفر الله منها ألقاها و إلا كتب واحدة بائیں طرف والا فرشتہ خطا کرنے والے مسلمان بندے سے چھ گھڑیاں قلم اٹھائے رکھتا ہے۔ پھر اگر وہ نادم ہو اور اللہ سے معافی مانگ لے تو نہیں لکھتا ورنہ ایک برائی لکھی جاتی ہے۔  اور دوسری مہلت اس کتابت سے بعد سے لے کر موت تک ہے۔  مصیبت تو یہ ہے کہ آج کل بہت سے لوگ اللہ تعالیٰ پر اعتماد نہیں رکھتے۔ وہ دن رات کئی قسم کے گناہ کرتے ہیں۔ پھر ان میں سے کچھ ایسے ہیں جو گناہوں کو معمولی سمجھتے ہیں۔ آپ دیکھیں گے کہ کئی لوگ صغیرہ گناہوں کواپنے دل میں حقیر جانتے ہیں۔ مثلاً کوئی ان میں سے کہہ دے گا : آخر ایک اجنبی عورت کو دیکھنے یا اس سے مصافحہ کرنے کا کیا نقصان ہے؟ یہ لوگ ان نامحرم عورتوں کو رسالوں اور سلسلہ وار مضامین میں نظریں بچا کر دیکھتے ہیں حتی کہ جب انہیں یہ معلوم ہو جاتا ہے کہ یہ بات حرام ہے تو ان میں کوئی بڑے آرام سے یہ پوچھتا ہے کہ اسمیں کتنی برائی ہے؟ آیا یہ کبیرہ گناہ ہے یہ صغیرہ؟ آپ جب امام بخاری رحمہ اللہ کی صحیح میں‌مذکور مندرجہ ذیل دو آثار دیکھ کر اس بات سے مقابلہ کریں گے تو آپ کو حقیقت معلوم ہو جائے گی:- حضرت انس رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں: عن انس رضی اللہ عنہ قال انکم لتعلمون اعمالا ھی ادق فی اعینکم من الشعر ان کنا لنعدھا فی عھد رسول اللہ صلی اللہ علیہ و علی آلہ وسلم من الموبقات (والموبقات ھی المھلکات(

  • فونٹ سائز:

    ب ب