کتاب: مقالات محدث مبارکپوری - صفحہ 202
الحمد للہ رب العلمین والسلام علی خیر خلقہ محمد والہ وصحبہ اجمعین اما بعد! یہ تکبیراتِ عید کے بارہ میں ایک مختصر سا رسالہ ہے، جس کا نام القو ل اسدید فیما یتعلق تکبیرات العید رکھا گھا ہے۔ یہ رسالہ ایک مقدمہ دو ابواب اور خاتمہ پر مشتمل ہے۔ مقدمہ میں بتلایا گیا ہے کہ اکثر صحابہ کرام رضی اللہ عنہم ،تابعین عظام رحمۃ اللہ علیہ ، ائمہ مجتہدین رحمۃ اللہ علیہ اور عامہ مسلمین کا مسلک یہ ہے کہ نمازِ عیدین میں بارہ تکبیریں کہنا چاہیے۔ کہ پہلی رکعت میں قرأت سے پہلے ست اور دوسری رکعت میں قرأت سے پہلے پانچ، پہلے باب میں اس بات کو ثابت کیا گیا ہے کہ یہی مسلک ومذہب اولی اور قابل عمل ہے۔ دورے باب میں ثابت کیا گیا ہے کہ اس بار ہ میں مسلک ِ احناف غیر اولیٰ اور مرجوح ہے۔ خاتمہ میں مختصراً نمازِ عید کے دوسرے مسائل ذکر کئے گئے ہیں، اور بتلایا گیا ہے کہ تکبیراتِ عیدین میںرفع الیدین کرنے کا کوئی ثبوت نہیں۔