کتاب: نماز میں ہاتھ باندھنے کا حکم اور مقام - صفحہ 20

اگر یہ طویل جرح سلیمان بن حرب کی ہے تو یعقوب الفارسی مؤمل کے موثقین میں سے ہیں اور اگر یہ جرح یعقوب کی ہے تو سلیمان بن حرب مؤمل کے موثقین میں سے ہیں۔ تنبیہ: یہ جرح جمہور کے مخالف ہونے کی وجہ سے مردود ہے۔ * ابوزرعہ الرازی : "فی حدیثہ خطا کثیر" (میزان الاعتدال ۲۲۸/۴ ت ۸۹۴۹( یہ قول بھی بلا سند ہے۔ حافظ مزی فرماتے ہیں: "حافظ مزی فرماتے ہیں: "حافظ مزی فرماتے ہیں: "استشھد بہ البخاری" اس سے بخاری نے بطور استشہاد روایت لی ہے۔ (تہذیب الکمال ۵۲۷/۱۸( محمد بن طاہر المقدسی (متوفی ۵۰۷ھ( نے ایک راوی کے بارے میں لکھا ہے: "بل استشھد بہ فی مواضع لبیین انہ ثقۃ"معلوم ہوا کہ مؤمل مذکور امام بخاری کے نزدیک ثقہ ہے ، منکر الحدیث نہیں ہے۔ 3۔ ابن سعدمعلوم ہوا کہ مؤمل مذکور امام بخاری کے نزدیک ثقہ ہے ، منکر الحدیث نہیں ہے۔ 3۔ ابن سعدمعلوم ہوا کہ مؤمل مذکور امام بخاری کے نزدیک ثقہ ہے ، منکر الحدیث نہیں ہے۔ 3۔ ابن سعد: "ثقۃ کثیر الغلط" (الطبقات الکبری لابن سعد ۵۰۱/۵( 4۔ دارقطنی: "صدوق کثیر الخطا* عبدالباقی بن قانع البغدادی: "* عبدالباقی بن قانع البغدادی: "* عبدالباقی بن قانع البغدادی: "صالح یخطئ تضعیف کی ہے۔ (دیکھئے میزان الاعتدال ۵۳۲/۲، ۵۳۳( تضعیف کی ہے۔ (دیکھئے میزان الاعتدال ۵۳۲/۲، ۵۳۳( 5۔ حافظ ابن حجر العسقلانی: "5۔ حافظ ابن حجر العسقلانی: "5۔ حافظ ابن حجر العسقلانی: "صدوق سیئ الحفظ"(تقریب التہذیب : ۷۰۲۹( 6۔ احمد بن حنبل: "مؤمل کان یخطئ

  • فونٹ سائز:

    ب ب