کتاب: نماز میں ہاتھ باندھنے کا حکم اور مقام - صفحہ 44

تہذیب التہذیب ۲۰۵/۴ بلاسند( اس کا تعلق اختلاط سے ہے جس کا جواب آگے آرہا ہے۔* یعقوب بن شیبہ: "وروایتہ عن عکرمۃ خاصۃ مضطربۃ وھو فی غیر عکرمۃ صالح ولیس من المتشبتین ومن سمع من سماک قدیماً مثل شعبۃ وسفیان فحدیثھم عنہ صحیح مستقیم والذی قال ابن المبارک انما یری انہ فیمن سمع منہ باخرۃ ان جارحین کی جرح کے مقابلے میں درج ذیل محدثین سے تعدیل مروی ہے: معدلین اوران کی تعدیل ان جارحین کی جرح کے مقابلے میں درج ذیل محدثین سے تعدیل مروی ہے: معدلین اوران کی تعدیل ان جارحین کی جرح کے مقابلے میں درج ذیل محدثین سے تعدیل مروی ہے: 1۔ مسلم: احتج بہ فی صحیحہ (دیکھئے میزان الاعتدال ۲۳۳/۲( شروع میں سماک کی بہت سی روایتوں کا حوالہ دیا گیا ہے جو صحیح مسلم میں موجود ہیں لہٰذا سماک مذکور امام مسلم کے نزدیک ثقہ وصدوق اور صحیح الحدیث ہیں۔ 2"""وقد علق لہ البخاری استشھاداً بہ(سیر اعلام النبلاء ۲۴۸/۵( اثبات التعدیل فی توثیق مؤمل بن اسماعیل میں گزرچکا ہے کہ امام بخاری جس راوی سے بطور استشہاد روایت کریں وہ (عام طور پر) امام بخاری کے نزدیک ثقہ ہوتا ہے۔ (دیکھئے ص ۳۰( 3۔ شعبہ: "روی عنہ " (

  • فونٹ سائز:

    ب ب