کتاب: نماز میں ہاتھ باندھنے کا حکم اور مقام - صفحہ 8

نماز میں ہاتھ باندھنے کا حکم اور مقام یقینا فلاح پائی اہل ایمان نے جو اپنی نمازوں میں خشوع کرتے ہیں۔ (المؤمنون: ۱،۲( [ قَدْ اَفْلَحَ الْمُؤْمِنُوْنَ Ǻ۝ۙ الَّذِيْنَ هُمْ فِيْ صَلَاتِهِمْ خٰشِعُوْنَ Ą۝ۙ] یقینا فلاح پائی اہل ایمان نے جو اپنی نمازوں میں خشوع کرتے ہیں۔ (المؤمنون: ۱،۲( [ قَدْ اَفْلَحَ الْمُؤْمِنُوْنَ Ǻ۝ۙ الَّذِيْنَ هُمْ فِيْ صَلَاتِهِمْ خٰشِعُوْنَ Ą۝ۙ]رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: اسلام کی بنیاد پانچ (چیزوں) پر رکھی گئی ہے: ۱۔ اسلام کی بنیاد پانچ (چیزوں) پر رکھی گئی ہے: ۱۔ اسلام کی بنیاد پانچ (چیزوں) پر رکھی گئی ہے: ۱۔ اشھد ان لا الہ الا اللہ اور اشھد ان محمدالرسول اللہ۔ ۲۔ نماز قائم کرنا ۳۔ زکوٰۃ ادا کرنا ۴۔ حج کرنا ۵۔ اور رمضان کے روزے رکھنا (ذا حدیث صحیح متفق علی صحتہ، شرح السنۃ للبغوی ج ۱ ص۱۷، ۱۸ ح۶، البخاری:۸، مسلم: ۱۶(((((((صلوا کما رایتمونی اصلی(( نماز اسی طرح پڑھو جیسے مجھے پڑھتے ہوئے دیکھتے ہو۔(صحیح بخاری ۸۹/۲ ح۶۳۱( نماز میں ایک اہم مسئلہ ہاتھ باندھنے کا ہے ، ایک گروہ کہتا ہے کہ نماز میں ہاتھ باندھنا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت ہے۔ دلیل نمبر ۱:

  • فونٹ سائز:

    ب ب