کتاب: حدیث جبریل - صفحہ 49
ثابت بن قیس کی ساری زندگی سعادت کا مرقع رہی اور مسلیمہ کذاب کی فوجوں سے جہاد کرتے ہوئے شہادت کاتمغہ بھی سینے سے سجالیا اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے فرمان کے بموجب قیامت کے دن جنت میں بھی داخل ہوجائیں گے۔ سبحان اللہ یہ خوشخبری حدیث رسول اور آوازِ رسول کے احترام اور اللہ تعالیٰ کی خشیت کی وجہ سے حاصل ہوئی ،تووہ شخص کتنے عظیم رتبہ پر فائز ہوگا جو اللہ تعالیٰ کی خشیت کو ملحوظ رکھتے ہوئے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی احادیثِ مبارکہ کی اس طرح اتباع کرتا ہے کہ ان کے مقابلے میں کسی کا قول آجائے ٹھکرادیتا ہے،نیز اس اتباع میں خالصیت کے پہلو کو اس طرح ملحوظ رکھتا ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے دین میں کسی بدعت کا ارتکاب نہیں کرتا۔ ﷲ الحمدوالمنۃ کہ اہل الحدیث اس انتہائی مبارک منہج پر فائز ہیں، ان کے دلوں میں احادیثِ رسول کااحترام اور ان کے عقائد واعمال میں احادیثِ رسول کی اتباع وامتثال کا پوراپورا رنگ