کتاب: ضوابط الجرح والتعدیل - صفحہ 36
یعنی ’’(مذکورہ روایت پرحافظ عبدالحق رحمہ اللہ نے الاحکام الشرعیۃ الکبریٰ میں) سکوت کیا ہے۔ میں یہ سمجھتا ہوں کہ ابو محمد (عبدالحق بن عبد الرحمن الإشبیلی) نے ایک جماعت کے روایت کرنے پر قناعت کی ہے، اس کو ابراہیم بن نافع اور ابراہیم بن عمر بن کیسان نے روایت کیا ہے، لیکن یہ (یعنی ایک جماعت کا روایت کرنا) ایسی چیز ہے کہ جس پر قناعت نہیں کی جاسکتی اس سے عدالت ثابت نہیں ہوتی۔‘‘ اب یہاں یہ بات ان کے اپنے مؤقف کے بالکل برعکس ہے،اور یہ اکثر کرتے ہیں۔ بیان الوھم والایھام میں فہرست نکال کر دیکھیں ،جہاں وہ کہتے ہیں ’’لا تعرف عدالتہ‘‘ تو وہاں ان کے نزدیک اس کی توثیق ثابت نہیں ہوتی۔ اسی طرح حافظ ذہبی رحمہ اللہ : (حافظ ذہبی کا ایک چھوٹا سا رسالہ ہے جس میں انہوں نے بیان